Must Install - Surah Yaseen Android App
Results 1 to 3 of 3

Thread: دین کے درجے

  1. #1
    Regular Members
    Join Date
    Jan 2012
    Location
    Ugalisharif Khushab
    Age
    38
    Posts
    44

    Lightbulb دین کے درجے

    دین کے درجے
    دین کے تین درجے ہیں :

    1۔ ایمان 2۔ اسلام 3۔ احسان

    حضرت عمر بن خطاب رضی اللہ عنہ بیان کرتے ہیں : ایک روز ہم حضور نبی اکرم صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم کی خدمت میں حاضر تھے کہ اچانک ایک شخص ہماری محفل میں آیا۔ اس کے کپڑے نہایت سفید، بال گہرے سیاہ تھے، اس پر سفر کے کچھ اثرات نمایاں نہ تھے اور ہم میں سے کوئی اسے پہچانتا بھی نہیں تھا۔ بالآخر وہ شخص نبی اکرم صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم کے سامنے آپ صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم کے گھٹنے سے گھٹنے ملا کر بیٹھ گیا اور اس نے دونوں ہاتھ اپنی دونوں رانوں پر رکھ لیے اور عرض کیا :

    يَا مُحَمَّدُ! أخْبِرْنِيْ عَنِ الْإِسْلَامِ؟

    ’’اے محمد صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم ! مجھے بتائیں اسلام کیا ہے؟ ‘‘

    حضور نبی اکرم صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم نے فرمایا :

    اَلإِسْلَامُ أنْ تَشْهَدَ أنْ لَا إِلٰهَ إِلَّا اﷲُ، وَأنَّ مُحَمَّدًا رَسُوْلُ اﷲِ، وَتُقِيْمَ الصَّلاَة، وَتُؤْتِيَ الزَّکَاةَ، وَتَصُوْمَ رَمَضَانَ وَتَحُجَّ الْبَيْتَ إِنِ اسْتَطَعْتَ إِلَيْهِ سَبِيْلاً.

    ’’(اسلام یہ ہے کہ) تو اس بات کی گواہی دے کہ اللہ تعالیٰ کے سوا کوئی معبود نہیں اور محمد (صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم) اﷲ تعالیٰ کے رسول ہیں اور یہ کہ تُو نماز قائم کرے، زکوٰۃ ادا کرے، رمضان المبارک کے روزے رکھے اور اگر استطاعت ہو تو بیت اللہ کا حج کرے۔‘‘

    اس جواب پر اس شخص نے عرض کیا :

    صَدَقْتَ.

    ’’آپ صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم نے سچ فرمایا۔‘‘

    اس نے دوسرا سوال کرتے ہوئے عرض کیا :

    أخْبِرْنِی عَنِ الايمان.

    ’’(یا رسول اﷲ!) مجھے ایمان کے بارے میں بتائیے؟‘‘

    حضور نبی اکرم صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم نے اس کے جواب میں فرمایا :

    أنْ تُؤْمِنَ بِاﷲِ، وَمَلَائِکَتِهِ، وَکُتُبِهِ، وَرُسُلِهِ، وَالْيَوْمِ الْآخِرِ، وَتُؤْمِنَ بِالْقَدَرِ خَيْرِهِ وَشَرِّهِ.

    ’’(ایمان یہ ہے کہ) تو اللہ تعالیٰ، اس کے فرشتوں، اس کی کتابوں، اس کے رسولوں اور قیامت کے دن پر ایمان لائے اور ہر خیر و شر کو اﷲ تعالیٰ کی طرف سے مقدر مانے۔‘‘

    اِس پر اُس اجنبی شخص نے پھر آپ صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم کی تصدیق فرمائی اور عرض کیا :

    أخْبِرْنِيْ عَنِ الْإِحْسَانِ؟

    ’’(یا رسول اﷲ صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم !) مجھے احسان کے بارے میں بتائیے؟‘‘

    آپ صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم نے فرمایا :

    أنْ تَعْبُدَ اﷲَ کَأنَّکَ تَرَاهُ، فَإِنْ لَّمْ تَکُنْ تَرَاهُ فَإِنَّهُ يَرَاکَ.

    ’’(احسان یہ ہے کہ) تو اللہ کی عبادت اس طرح کرے گویا تو اسے دیکھ رہا ہے اور اگر تو (یہ مقام نہ پانے کے سبب) اسے نہیں دیکھ رہا تو (کم ازکم یہ یقین ہی پیدا کرلے کہ) وہ تجھے دیکھ رہا ہے۔‘‘

    اب تیسری بار اس شخص نے آپ صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم کی تصدیق فرمائی۔ اس شخص کے جانے کے بعد حضور نبی اکرم صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم نے پوچھا : اے عمر! جانتے ہو یہ سوال کرنے والا کون تھا؟ میں نے عرض کیا : اللہ اور اس کا رسول صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم بہتر جانتے ہیں۔ فرمایا : یہ جبرائیل تھے جو تمہیں تمہارا دین سکھانے آئے تھے۔

    یہ حدیث مبارکہ دین کے لفظاً اور معناً وہ تین درجات بیان کرتی ہے، جن سے دین مکمل ہوتا ہے۔

    1. مسلم، الصحيح، کتاب الإيمان، باب بيان الايمان والاسلام والاحسان، 1 : 37، 38، رقم : 8
    2. بخاری، الصحيح، کتاب الايمان، باب سوال جبريل، 1 : 27، 28، رقم : 50

    واللہ و رسولہ اعلم بالصواب۔
    پیرآف اوگالی شریف

  2. #2
    Regular Members
    Join Date
    Nov 2012
    Age
    27
    Posts
    13

    Default

    veri nice topic esi baty sb ko pta honi chahye jis sy hamara iman or mazbot
    ho
    thanks for good sharing.....

  3. #3
    Regular Members
    Join Date
    Feb 2010
    Location
    Lahore
    Posts
    314

    Default

    Jazakallah

Visitors found this page by searching for:

نبی کے درجے میں ہونگے

Tags for this Thread

Posting Permissions

  • You may not post new threads
  • You may not post replies
  • You may not post attachments
  • You may not edit your posts
  •